کالے یرقان کے جڑ سے خاتمے کے لئے ایک زبردست نسخہ درج ذیل ہے۔


  • پیر
  • 2018-03-28
یرقان کی مختلف اقسام ہیں ، جس میں کالا یرقان سب سے خطرناک مانا جاتا ہے۔ اس میں جگر کے نیچے مرارہ نام کی تھیلی ہوتی ہے جس میں صفرا جو کھانے کو ہضم کرنے کا کام سرانجام دیتا ہے ، جمع رہتا ہے۔ مرارہ کی تھیلی سے ایک نالی آنت میں یہ صفرا لے جاتی ہے۔ اگر اس نالی میں کوئی رکاوٹ پیدا ہو جائے جس وجہ سے اس نالی میں ورم آجائے اور اس کا راستہ تنگ ہو جائے تو اس رکاوٹ کے سبب یرقان ہو تا ہے۔اس انفیکشن کی وجہ سے صفرا بجائے آنتوں میں گرنے کے ڈائریکٹ خون میں شامل ہونا شروع ہو جاتا ہے۔جس کی وجہ جگر میں انفیکشن پیدا ہو جاتی ہے ،جو یرقان کا باعث بنتی ہے۔ یرقان کے جڑ سے خاتمے کے لئے ایک زبردست نسخہ درج ذیل ہے۔ اجزا�آک کا دودھ : ایک چائے کا چمچ ترکیب اور طریقہ استعمال آک کے دودھ کے تین قطرے دائیں ہاتھ کی ہتھیلی پر ڈالیں اور اس ہاتھ سے دائیں پیر کے تلوے پر ملیں ۔ جب دودھ چپکنے لگے توملنا بند کر دیں اور 5 منٹ تک لگا رہنے دیں اس کے بعد تازہ پانی سے دھو لیں۔ دوسرے دن یہی عمل بائیں ہاتھ اور پیر کے ساتھ کریں۔ اس عمل باری باری دونوں ہاتھوں اور پیروں کے ساتھ کریں مستقل ایک ہفتے کے استعمال سے ہی کالے یرقان سے چھٹکارا مل جائے گا۔ جب بھی ڈاکٹر کے پاس جائیں تو کسی بھی صورت دوسروں کی استعمال شدہ سرنج استعمال نہ کریں۔ دوسروں کے خون کو ہاتھ لگانے سے پہلے دستانے کا استعمال کریں۔ خون لگوانے سے پہلے خون کی اچھی طرح جانچ کروا لیں تا کہ کسی بھی قسم کی بیماری سے بچا جا سکے۔ کیٹاگری میں : دلچسب کہانیاں