ایون فیلڈ ریفرنس میں سزا یافتہ کیپٹن (ر) صفدر کو اڈیالہ جیل منتقل کر دیا گیا


  • پیر
  • 2018-07-09
اسلام آباد (بیورو رپورٹ) قومی احتساب بیورو (نیب) کی احتساب عدالت نے ایون فیلڈ ریفرنس کے مجرم کیپٹن (ر) صفدر کو اڈیالا جیل بھیج دیا۔واضح رہے کہ گزشتہ روز کیپٹن (ر) صفدر ریلی کی شکل میں راولپنڈی کے لیاقت باغ پہنچے اور نیب حکام کو اپنی گرفتاری پیش کی تھی، انہوں نے رات نیب کے ریجنل آفس میں گذاری تھی۔پیر کے روز نیب حکام نے ایون فیلڈ ریفرنس میں ایک سال سزا پانے والے کیپٹن (ر) صفدر کو احتساب عدالت پیش کیا۔اس حوالے سے بتایا گیا کہ کیپٹن (ر) صفدر کو سخت سیکیورٹی میں نیب کے ریجنل دفتر سے احتساب عدالت میں لا یا گیااور نیب کی طرف سے احتساب عدالت کے جج محمد بشیر کے روبرو پیش کر کے کیپٹن (ر)صفدر کی وارنٹ گرفتاری کی تعمیل کرائی گئی۔جس کے بعد عدالت نے اڈیالا جیل کے نام ایک مراسلہ جاری کیا، بعدازاں سخت سیکیورٹی میں کیپٹن (ر) صفدر کو اڈیالاجیل روانہ کردیا گیا۔علاوہ ازیں کیپٹن (ر) صفدر کی سیکیورٹی میں پولیس کے علاوہ رینجرز اہلکار بھی شامل تھے۔جب مجرم کو جوڈیشل کمپلکس میں لایا گیا تو پولیس کی بھاری نفری موجود تھی جس نے حصار بنا کر کیپٹن (ر) صفدر کو عدالت کے اندورنی احاطے میں پہنچایا۔خیال رہے کہ ایون فیلڈ ریفرنس میں احتساب عدالت نے کیپٹن( ر) صفدر کو ایک سال قید کی سزا سنائی تھی تاہم عدالت نے نیب سے تعاون نہ کرنے پر کیپٹن (ر) صفدر کو الگ سے ایک سال قید کی سزا سنائی تھی۔اس حوالے سے بتایا گیا کہ کیپٹن( ر) صفدر کی دونوں سزائیں ایک ساتھ شروع ہوں گی، ضمانت نہ ملنے کی صورت میں کیپٹن (ر) صفدر کو مجموعی طور پر ایک سال قید ہی بنتی ہے۔